Sun, Feb 28, 2021
ڈاکٹر قاسم رسول الیاس کے خلاف ایف آئی آر فوراََ واپس لی جائے
مولانا خالد سیف اللہ رحمانی کا بیان
———————————–
۔۲۸؍ جولائی /حضرت مولانا خالد سیف اللہ رحمانی نے آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ اور جماعت اسلامی ہند کے معزز رکن ڈاکٹر قاسم رسول الیاس کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اظہار رائے کے بنیادی حق کو دبانے اور ملک کی جمہوریت کو تباہ کرنے کی کوشش ہے، مولانا رحمانی نے کہا کہ یہ بڑے افسوس کی بات ہے کہ ملک جمہوریت سے آمریت کی طرف بڑھ رہا ہے، جناب ڈاکٹر قاسم رسول الیاس صاحب ایک محب وطن اور ذمہ دار شہری ہیں، مختلف مذہبی طبقات سے اُن کے روابط ہیں، انہیں پورے ملک میں عزت واعتبار کی نظر سے دیکھا جاتا ہے، عجیب بات ہے کہ اُن پر فساد کو بھڑکانے کا الزام لگایا جا رہا ہے، اور جو لوگ کھلے عام لوگوں کو فساد اور قتل وغارت گری پر اُکسا رہے ہیں، ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جا رہی ہے، مولانا رحمانی نے مطالبہ کیا ہے کہ یہ ایف آئی آر فوری طور پر رد کی جائے اور سیاسی مقاصد کے تحت جو گرفتاریاں کی گئی ہیں، ان کی رہائی عمل میں لائی جائے۔
۲۸؍جولائی ۲۰۲۰ءخالد سیف اللہ رحمانی