Sun, Feb 28, 2021

ایمان کی سلامتی کے بغیر کامیابی ممکن نہیں
افادات: حضرت مولانا سید احمد ومیض صاحب ندوی دامت برکاتہم
استاذ حدیث جامعہ اسلامیہ دارالعلوم حیدرآبادو خلیفہ حضرت پیر ذوالفقار احمد نقشبندی زید مجدہٗ
13؍محرم الحرام؍1442ھ، مطابق:2؍ستمبر ؍2020ء،چہارشنبہ
ضبط وترتیب :مفتی سیدابراہیم حسامی قاسمیؔ
استاذ جامعہ اسلامیہ دارالعلوم حیدرآباد

٭ اللہ کی نعمتوں میں سب سے بڑی نعمت ایمان ہے، اس کی قدر اور حفاظت ہماری دینی ذمہ داری ہے۔
٭ہمارا سب کچھ لٹ جائے اور ہم بے یار ومددگار ہوجائیں؛ مگر ہمارا ایمان باقی ہے تو ہم پھر بھی کامیاب ہیں؛ اگر سب کچھ ہوتے ہوئے ایمان چلا جائے تو سب رکھ کر بھی ہم ناکام ہیں۔
٭ایمان ایسی چیز نہیں ہے کہ ایک مرتبہ حاصل ہونے کے بعد ہمیشہ کے لیے باقی رہ جائے؛ اگر اس کی حفاظت اور اس کے بقاء کا سامان نہ کیا جائے تو یہ سینوں سے نکل جاتا ہے ۔
٭جو چیز جتنی قیمتی ہوتی ہے ، اس کے لٹیرے بھی اتنے ہی زیادہ ہوتے ہیں۔
٭کسی علاقہ میں علماء کے ہوتے ہوئے بھی فتنے جنم لے رہے ہیں تو سمجھ لیں کہ وہاں کہ علماء خواب غفلت میں ہیں۔
٭اکثرلوگ فتنوں کا شکار کم علمی یا لاعلمی کی بنیاد پر ہوتے ہیں۔
٭قیامت پر سارے مسلمان ایمان لاتے ہیں ؛ مگر اکثروں کو یہ پتہ نہیں قیامت کی نشانیوں پر بھی ایمان لانا ضروری ہے۔
٭علماء کی صحبت حاصل کرکے صحیح علم حاصل کرنا وقت کا اہم ترین تقاضہ ہے۔
٭زمینی سطح پر کام اور فتنوں کے خلاف شعور بیداری اس وقت کے بنیادی کام ہیں۔
٭ ہر مسجد سے شعور بیداری مہم چلائی جائے۔